PAK Magazine | An Urdu website on the Pakistan history
Sunday, 23 June 2024, Day: 175, Week: 25

PAK Magazine |  پاک میگزین پر تاریخِ پاکستان ، ایک منفرد انداز میں


پاک میگزین پر تاریخِ پاکستان

Annual
Monthly
Weekly
Daily
Alphabetically

اتوار 18 ستمبر 1966

جنرل یحییٰ خان

جنرل یحییٰ خان
عہدہ: آرمی چیف (کمانڈر انچیف) ، صدر ، چیف مارشل لاء ایڈمنسٹریٹر
میعاد: 18ستمبر 1966ء تا 20 دسمبر 1971ء …… فوجی سروس: 1938ء …… تا …… 1971ء
صدارت: 25 مارچ 1969ء تا 20 دسمبر 1971ء
حیات: 4 فروری 1917ء تا 10 اگست 1980 …… تعلق: پشاور/قزلباش …… زبان: فارسی

پاکستان کاپانچواں آرمی چیف ، جنرل یحییٰ خان ، پاکستان ہی نہیں بلکہ اسلامی تاریخ کا ایک بہت بڑا ولن ثابت ہوا کہ جس کے دور میں پاکستانی فوج کو تاریخ کی ایک شرمناک ترین فوجی شکست ہوئی تھی۔ مشرقی پاکستان میں فوجی ایکشن اور مغربی پاکستان سے بھارت پر حملہ کرنا اس کے فوجی کیرئر کے تباہ کن فیصلے ثابت ہوئے تھے جن میں پاکستان کا پہلا وائس آرمی چیف جنر ل حمید بھی برابر کا شریک تھا جو ایک فور سٹار جنرل بنا دیا گیا تھا۔

ایک عیاش اور نااہل جرنیل

بتایا جاتا ہے کہ جنرل یحییٰ خان جیسے بدکردار اور عیاش جرنیل کو دو سینئر جرنیلوں پر فوقیت دے کر آرمی چیف بنا کر صدر جنرل ایوب خان نے پاکستان سے سب بڑی دشمنی کی تھی۔ اس کی کارکردگی بھی کوئی مثالی نہ تھی بلکہ جب1965ء کی جنگ میں اکھنور کی طرف جنرل اختر حسین ملک کی قیادت میں کامیاب پیش قدمی ہو رہی تھی توکاروائی کے دوران کمان یحییٰ خان کے سپر د کرنے میں 36 گھنٹے لگ گئے تھے جس سے میدان جنگ کا نقشہ بدل گیا تھا۔ اس کوتاہی اور نااہلی کے باوجود اسے آرمی چیف بنانا اچھنبے کی بات تھی۔

ہوس اقتدار میں ملک تڑوا لیا

جنرل یحییٰ خان ، اپنے ابتدائی دو ر میں تو بڑا فرمانبردار رہا لیکن جب صدر جنرل ایوب خان کا زوال شروع ہوا تو موصوف کے پر پرزے نکل آئے تھے اور وہ پہلا فوجی جنرل بنا جس نے اپنے سابقہ باس کی حکومت پر قبضہ کیا تھا اورجس نے ملک گیر مارشل لاء بھی لگایا تھا۔ گو اس نے کچھ نیک کام بھی کئے تھے جن میں سے ون یونٹ توڑنا ، صوبے بحال کرنا ، آزادانہ اور منصفانہ انتخابات منعقد کراناشامل ہیں لیکن انتقال اقتدار میں وہ ویسا ہی بددیانت تھا جیسا جنرل ضیاع اپنی 8ویں ترمیم یا جنرل مشرف 17ویں ترمیم کی صورت میں تھے۔ وہ بھی ایک ایسے آئین کی تشکیل پر بضد تھا جس میں طاقت کا منبع صدر یا آرمی چیف رہے لیکن اکثریتی پارٹی لیڈر شیخ مجیب الرحمان اسے یہ حق دینے کو کسی طور بھی تیار نہیں تھا۔ جنرل یحییٰ نے ملک تڑوا لیا لیکن اقتدار سے دستبردار ہونے کو تیار نہیں تھا۔ اگر سقوط ڈھاکہ نہ ہوتا تو وہ کبھی بھی سولین کو حکومت نہ دیتا جو اس کے اس پریس ریلیز سے ظاہر تھا جو اس نے 20 دسمبر 1971ء سے نئے آئین کی صورت میں ملک پر مسلط کرنا تھا۔






General Yahya Khan

Sunday, 18 September 1966

A profile of General Yahya Khan by BBC Hindi..


General Yahya Khan (video)

Credit: BBC News Hindi



پاکستان کی تاریخ پر ایک منفرد ویب سائٹ

پاک میگزین ، پاکستان کی سیاسی تاریخ پر ایک منفرد ویب سائٹ ہے جس پر سال بسال اہم ترین تاریخی واقعات کے علاوہ اہم شخصیات پر تاریخی اور مستند معلومات پر مبنی مخصوص صفحات بھی ترتیب دیے گئے ہیں جہاں تحریروتصویر ، گرافک ، نقشہ جات ، ویڈیو ، اعدادوشمار اور دیگر متعلقہ مواد کی صورت میں حقائق کو محفوظ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

2017ء میں شروع ہونے والا یہ عظیم الشان سلسلہ، اپنی تکمیل تک جاری و ساری رہے گا، ان شاءاللہ



پاکستان کے اہم تاریخی موضوعات



تاریخِ پاکستان کی اہم ترین شخصیات



تاریخِ پاکستان کے اہم ترین سنگِ میل



پاکستان کی اہم معلومات

Pakistan

چند مفید بیرونی لنکس



پاکستان فلم میگزین

پاک میگزین" کے سب ڈومین کے طور پر "پاکستان فلم میگزین"، پاکستانی فلمی تاریخ، فلموں، فنکاروں اور فلمی گیتوں پر انٹرنیٹ کی تاریخ کی پہلی اور سب سے بڑی ویب سائٹ ہے جو 3 مئی 2000ء سے مسلسل اپ ڈیٹ ہورہی ہے۔


پاکستانی فلموں کے 75 سال …… فلمی ٹائم لائن …… اداکاروں کی ٹائم لائن …… گیتوں کی ٹائم لائن …… پاکستان کی پہلی فلم تیری یاد …… پاکستان کی پہلی پنجابی فلم پھیرے …… پاکستان کی فلمی زبانیں …… تاریخی فلمیں …… لوک فلمیں …… عید کی فلمیں …… جوبلی فلمیں …… پاکستان کے فلم سٹوڈیوز …… سینما گھر …… فلمی ایوارڈز …… بھٹو اور پاکستانی فلمیں …… لاہور کی فلمی تاریخ …… پنجابی فلموں کی تاریخ …… برصغیر کی پہلی پنجابی فلم …… فنکاروں کی تقسیم ……

پاک میگزین کی پرانی ویب سائٹس

"پاک میگزین" پر گزشتہ پچیس برسوں میں مختلف موضوعات پر مستقل اہمیت کی حامل متعدد معلوماتی ویب سائٹس بنائی گئیں جو موبائل سکرین پر پڑھنا مشکل ہے لیکن انھیں موبائل ورژن پر منتقل کرنا بھی آسان نہیں، اس لیے انھیں ڈیسک ٹاپ ورژن کی صورت ہی میں محفوظ کیا گیا ہے۔

پاک میگزین کا تعارف

"پاک میگزین" کا آغاز 1999ء میں ہوا جس کا بنیادی مقصد پاکستان کے بارے میں اہم معلومات اور تاریخی حقائق کو آن لائن محفوظ کرنا ہے۔

Old site mazhar.dk

یہ تاریخ ساز ویب سائٹ، ایک انفرادی کاوش ہے جو 2002ء سے mazhar.dk کی صورت میں مختلف موضوعات پر معلومات کا ایک گلدستہ ثابت ہوئی تھی۔

اس دوران، 2011ء میں میڈیا کے لیے akhbarat.com اور 2016ء میں فلم کے لیے pakfilms.net کی الگ الگ ویب سائٹس بھی بنائی گئیں لیکن 23 مارچ 2017ء کو انھیں موجودہ اور مستقل ڈومین pakmag.net میں ضم کیا گیا جس نے "پاک میگزین" کی شکل اختیار کر لی تھی۔

سالِ رواں یعنی 2024ء کا سال، "پاک میگزین" کی مسلسل آن لائن اشاعت کا 25واں سلور جوبلی سال ہے۔




PAK Magazine is an individual effort to compile and preserve the Pakistan history online.
All external links on this site are only for the informational and educational purposes and therefor, I am not responsible for the content of any external site.